561

چائنا بدرمنیر کا اعلان جنگ – کب اور کس کے ساتھ؟

چائنا بدرمنیر کا اعلان جنگ

پی ٹی ایم (PTM) رہنماء اور جنوبی وزیرستان سے ممبر پارلیمان (MNA) علی وزیر کی گزشتہ دنوں پشاور میں ہونے والے پی ٹی ایم جلسے میں کی گئی پالیسی تقریر کے نکات:

1۔ ہم ارمان لونی کی ایف آئی ار نہیں چاہتے کیونکہ پشتونوں کے معاملات قانون سے آزاد ہوتے ہیں۔ قتل کا بدلہ قتل سے ہی پورا ہوگا، پشتون قوم صدیوں سے جنگ و جدل اور اموات کی عادی قوم ہے، واللہ اب تم نہیں بچنے والے۔



2۔ چین اور دیگر ممالک سے پر زور اپیل ہے کہ پشتون علاقے میں کی جانے والی سرمایہ کاری کا کوئی بھی معاہدہ ریاستِ پاکستان سے نہ کریں۔ یہ معاہدات ہم خود کرینگے جب ہم معاہدہ کرنے کی پوزیشن میں آجائیں (یعنی ایک خود مختار آزاد ریاست)۔ وہ وقت اب قریب ہے جب ہمارے دل ٹھنڈے ہو جائیں گے۔

3۔ ان (یعنی پاکستان) کے ساتھ کسی قسم کے کوئی مذاکرات ممکن نہیں، مذاکرات ہوئے بھی تو بے نتیجہ ہی نکلیں گے، ہمیں اور ان (ریاستِ پاکستان) دونوں کو بخوبی علم ہے کہ فیصلے کیلئے ہمیں بالآخر کونسی حد تک جانا ہے۔

4۔ ہماری زمین غلام ہے، ہم سب غلامی کی زندگی بسر کررہے ہیں۔ صاف صاف کہہ دیتا ہوں کہ اس وقت کچھ مجبوریاں رکاوٹ بنی ہوئی ہیں، جس دن یہ مجبوریاں ختم ہوئیں، غلامی ترک کر دینگے، یعنی آزاد پختونستان بنائیں گے-

5۔ جو پشتون ان (پاکستان ) کے وفادار ہیں وہ واپس پلٹ آئیں کہ شائد تم کو غلطی لگ گئی ہو، یا تمہیں کسی نے اکسایا ہو، یا تمہیں ان (پاکستان) نے یرغمال کیا ہوگا، یا تمہیں کسی نے باندھا ہوگا، آج ہی پلٹ آؤ آج وقت ہے نہیں تو ان پنجابیوں کے ساتھ باندھ کر تمہیں بھی سمندر میں پھینک دیں گے-



قارئین خود فیصلہ کریں کہ غداری، بغاوت، ریاست پاکستان اور اہل پنجاب کے خلاف اگر یہ اعلانِ جنگ نہیں تو اور کیا ہے…؟؟؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں