464

موجودہ وزیرِاعظم اور وزیرِ خزانہ نے ماضی میں کئی بار کہا تھا کہ ہم آئی ایم ایف کے پاس نہی جائینگے. لیکن اب کیوں گئے?

پی ٹی آئی اور آئی ایم ایف

موجودہ وزیرِاعظم اور وزیرِ خزانہ نے ماضی میں کئی بار کہا تھا کہ ہم آئی ایم ایف کے پاس نہی جائینگے. لیکن اب کیوں گئے?

کسی بھی ملک کی ترقی و خوشحالی کا انحصار اس کی مضبوط معیشت اور اقتصادیات پر ہوتا ہے۔ پاکستان جو ایک ترقی پذیر ملک ہے ، اسے معرض وجود میں آنے کے کئی سال تک پسماندہ ممالک کی صف میں شامل رہا کیونکہ اسے بیک وقت کئی گھمبیر مسائل اور سنگین بحرانوں کا سامنا کرنا پڑا۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان کو امریکہ، آئی ایم ایف اور دیگر عالمی مالیاتی اداروں سے قرضے لینا پڑے.

ففتھ جنریشن وار فیئر کے مطابق کسی بھی ملک کی مشعیت کو کمزور کرکے ملک کو زیر کیا جاتا ہے. اس وقت کرپشن کی وجہ سے خزانہ خالی ہے. تقریباً 50 سے زائد بڑے بڑے چور اور ڈاکوؤں کے مقدمات نیب میں چل رہے ہیں. ان سے پیسے واپس لینے میں کچھ دیر ہے. سابقہ حکمرانوں کی مالی پالیسیوں کی وجہ سے ملک بہت کمزور حالت میں ہے. پاکستان بیک وقت کئی جنگوں کا شکار ہے. جنگ قوموں کے بغیر نہی لڑی جاتی.

قوم کو موجودہ صورتحال میں چاہئے کہ حکومت کا ساتھ دیں. اپوزیشن عوام کو مِس گائیڈ کر رہی ہے. موجودہ حکومت نے اپنے 55 دنوں میں کافی جد و جہد کی لیکن ڈاکوؤں سے پیسہ نہی نکالا گیا. لیکن پھر بھی قوم کو مایوس نہی کیا جائیگا.
علامہ صاحب نے خوب فرمایا تھا کہ.

نہیں ہے نا اُمید اقبال اپنے کشت ویران سے.
زرہ نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی
تخریر و تجزیہ
صوبیدار میجر (ر) بخت روم شاہ تمغہ خدمت عسکری
سیاسی و سماجی کارکن پی ٹی آئی بونیر خیبر پختونخواہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں