473

بونیر میں امن و آمان کی صورت حال پر جناب بخت روم شاہ باچا کا تفصیلی تحریر

بونیر میں آمن وآمان کی صورتِ خال.
2013 کے الیکشن میں کامیابی کے بعد جب صوبہ خیبر پختونخواہ میں پی ٹی آئی حکومت آئی تو پورا کے پی کے امن کا گہوارہ بن چکا تھا. اور پانچ سال کے بعد عوام نے ایک بار پھر پی ٹی آئی کو بھاری اعتماد کے ساتھ ووٹ دیکر کامیاب کیا.
مخالفین اس پارٹی کے اوپر جاتے ہوئے گراف کو دیکھ کر پریشان ہوگئے کہ کس طرحِ اس حکومت سے عوام کو متنفر کریں. سب سے پہلے ملک بھر میں سوشل میڈیا کے زریعے پورے پاکستان اور حصوصی طور پر اس صوبے کا پوسٹ مارٹم کرنا شروع کردیا. یہ تو اللہ کا شکر ہے کہ یہاں کے عوام کی اس حکومت کے ساتھ بے پناہ لگاؤ ہے جس کی وجہ سے یہ لوگ پریشان نہ ہوسکے.
اب ایک نئی چال چل گئی ہے کہ چوری چکاری کے کام بڑھ گئے ہیں. خیر بکرے کی ماں کب تک خیر منائیگی. بہت قریب ہے کہ کے پی کے کی اچھی تربیت یافتہ پولیس انکے گردنوں تک پہنچ کر قابو کردینگے. چونکہ میرا تعلق ضلع بونیر سے ہے یہاں پر بھی یہ سلسلہ جاری ہے اور تاخال پولیس کو کوئی بڑی کامیابی نہی ہوئی ہے. لیکن ہماری ہر دلغزیز پولیس دن رات ایک کرکے ان چوروں کے پیچھے پڑے ہیں. ضرور کچھ دنوں میں قابو ہوجائینگے. عوام کواپنی لوکل لیڈرشپ اور فورسز پر یقین ہے کہ ان گھناؤنے جرائم میں جو بھی ملوث ہوگا تو ضرور بے نقاب ہوکر سامنے آئیگا.
یہ ایک پاکستان ہے اور یہاں ایک جیسا قانوں. قانون شکن جو بھی ہوگا بچ کر کہاں جائےگا.
ہم اپنے پولیس کو یقین دلاتے ہیں کہ جب بھی عوام کی ضرورت ہو تو ہم تابعدار ہیں.
تحریر
صوبیدار میجر (ر) بخت روم شاہ تمغہ خدمت عسکری
سیادی و سماجی کارکن پی ٹی آئی بونیر خیبرپختونخواہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں