وزیر اعظم عمران خان کا سعودی عرب کا دورہ ایک تفصیلی جائزہ

وزیراعظم عمران خان کا سعودی عرب کا دورہ
جس دن پاکستان کے تین بڑے مجرم جو دولت کے لوٹ مار میں ملوث تھے اور جیل سے اسلام اباد ہائیکورٹ کے فیصلہ کے مطابق سزا معطل ہونے کی وجہ سے رہا ہو رہے تھے تو عین اس وقت مرد قلندر امام انقلاب جناب عمران خان صاحب سعودی عرب کا دورہ کر رہے تھے. دورے کے دوران عمران نے کہا کہ ہماری سعودی حکومت کے ساتھ مکہ اور مدینہ کی وجہ سے ایک جذباتی اور مذہبی تعلق ہے. ہمارے سعودی عرب سے بہت گہرے تعلقات ہیں. ہم عالم اسلام کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنا چاہتے ہیں اور کسی ملک کے جھگڑے میں شامل نہی ہونگے.
سعودی حکومت اور عوام نے عمران خان صاحب کو بہت بڑی غزت دی ہے. اور یہ تاثر بھی حتم ہوگیا ہے کہ سعودی عرب کا پاکستان کے ساتھ صرف شریف خاندان کی وجہ سے ہے. یہ ایسا نہی ہے.
سعودی عرب واخد ملک ہے کہ پاکستان نے انکو سی پیک میں تیسرے اسڑیٹیجک پارٹنر کی دعوت دی ہے. سعودی عرب کے ساتھ 10 ارب ڈالر کا اقتصادی معاہدہ بھی ہوا ہے. اکتوبر میں ایک اعلٰی سطح کا سعودی وفد پاکستان آئےگا. اسکے بعد شاہ سلیمان بھی آئینگے. دوسرے طرف آرمی چیف جنرل باجوہ صاحب نے چین کا دورہ کیا جسکا پاکستان پر بہت مثبت اثرات پڑینگے. تیسری بات یہ ہے کہ امریکہ ہمارے ساتھ تعلقات بہتر کرنے کی کوشش کررہاہے.
اللہ کا فضل ہے کہ پاکستان کے بُرے دن اب ختم ہونے والے ہیں. اگر اندرونی دشمن پاکستان دشمنی کو چھوڑ دیں. انکو اپنی سیاست سے غرض ہے ملک سے نہی.
اللہ ہمیں اس دلدل سے باہر نکالے. آمین ثمہ آمین
تحریر و تجزیہ
صوبیدار میجر(ر) بخت روم شاہ تمغہ خدمت عسکری
سیاسی و سماجی کارکن پی ٹی آئی بونیر خیبر پختونخواہ

اپنا تبصرہ بھیجیں