پانی ڈیم اور پاکستان، ایک تفصیلی جائزہ

پانی, ڈیم اور پاکستان

قدرت کے بے شمار نعمتوں میں سے پانی انسانی زندگی کا نہایت اہم غذائی جزو ہے۔ بلکہ یوں کہا جائے کہ پانی ہی زندگی ہے تو غلط نہ ہوگا.
ہماری زمین کا 70 فیصد حصہ پانی اور صرف 30 فیصد خشکی پر مشتمل ہے. ایک عام انسان کے جسم میں35 سے 50 لیٹر تک پانی ہوتا ہے۔ مردوں میں کل وزن کا65 تا 70 فیصد حصہ پانی ہے۔ جبکہ خواتین میں 65 فیصد پانی ملتا ہے.
لیکن اتنی بڑی نعمت سے پاکستانی قوم کچھ سالوں کے بعد محروم ہونا شروع ہوجائےگی. اور یہ عظیم ملک خشک سالی اور غذا کی قلت کا شکار ہوجائیگا. 70 سالوں تک حکومت کرنے والے لوگ اس بڑے ایشو کو حل کرنے میں ناکام رہے. آخر کار ایک نیک مُنصف(چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان) نے بھاشا اور مہمند ڈیمز بنانے کا ارادہ کرتے ہوئے فنڈ قائم کیا. جسمیں پاکستانی لوگ دل کھول کر مدد دے رہے ہیں. لیکن کچھ بد قسمت اور ملک دشمن لوگ اسکی مخالفت پر اتر آئے ہیں اور اس عمل کو نقصان پہنچانے کی کوشش کررہے ہیں. آخرکا CJ نے ارٹیکل 6 کے زریغے قابو کرنے کی وارننگ دے دی ہے. جو مخالفت کریگا تو اسکو اس آرٹیکل کا سامنا کرنا پڑیگا.
پاکستانی قوم کا فرض بنتا ہے کہ اپنی اولادوں کا مستقبل مخفوظ کرنے کے لیے ڈیمز کی حمایت کریں خواہ بھاشا, مہمند یا کالاباغ ہو.
اللہ پاکستان کا مددگار ہو.
تخریر و تجزیہ
صوبیدار میجر (ر) بخت روم شاہ تمغہ خدمت عسکری
سیاسی و سماجی کارکن پی ٹی آئی بونیر خیبرپختونخواہ

اپنا تبصرہ بھیجیں