پولیس کو نئی وردی کی ضرورت نہیں، تو پھر کس چیز کی ضرورت ہے؟

پولیس کو نئی وردی کی نہیں ایک ایسے اسکول کی ضرورت ہے جس میں ان کے بچون کو مفت اور معیاری تعلیم مل سکے ۔

ایک اسپتال کی ضرورت ہے جس میں انہیں مفت اور معیاری علاج میسر ہو ۔




ایک ایسے گھر کی ضرورت ہے جس میں ان کے گھر والے محفوظ رہیں جب وہ اپنے گھر سے دور اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہوں ۔

ایک ایسی محکمانہ سپورٹ کی ضرورت ہے کہ وہ کسی بھی مجرم کو بلا خوف و خطرہ گرفتار کرسکیں چاہے وہ کتنا بھی طاقتور اور بااثر کیں نا ہو تاکہ انہیں پورا یقین ہو کہ مجھے اس طاقتور اور بااثر مجرم کو گرفتار کرنے پر اپنی نوکری ، عھدے اور اپنی عزت و وقار سے ہاتھ دھونا نہیں پڑیں گے ۔




ایک ایسی محکمانہ یقین دہانی چاہیے جس سے انہیں اس بات کا پورا یقین ہو کہ عوام کی جان و مال عزت و آبرو کی حفاظت کی خاطر دہشتگردون سے مقابلہ کرتے ہوئے اگر ہم شھید ہوجائیں تو ہماری بیوائوں اور یتیم بچوں کو ان کا پورا پورا حق گھر کی دہلیز پر پنچا دیا جائے گا اور ہماری بیوائوں کو سرکاری دفتروں سے دہکے گالیاں اور وحشی درندوں کی نظروں کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا ۔

ہمیں ان سب باتوں کی یقین دہانی کی ضرورت ہے ناکہ اچھی اور مہنگی وردیوں کی




وردیاں بدلنے سے پولیس کو ایماندار نہیں بنایا جاسکتا
لیکن ان سب سھولیات دینے کے بعد پولیس سے ایمانداری کی توقع ضرور کی جاسکتی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں