آل گڈز ٹرانسپورٹ یونین بونیرکا احتجاجی اجلاس

بونیر۔شوکت علی بونیری سے
آل گڈز ٹرانسپورٹ یونین بونیرکا احتجاجی اجلاس،ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مذاکرات کیلئے لائحہ عمل طے کیاگیا،ڈپٹی کمشنر کی جانب سے وزن کے حوالے سے پرانے طریقہ کاروضع کرنے کے فیصلہ کو سلام پیش کرتے ہیں ،پولیس ہرگاڑی کو مسلسل اور زیادہ چالان کا سلسلہ بندکریں ،مائننگ کی کاروبار سے حکومت کو ماہانہ کروڑوں روپے کا فائدہ اور دولاکھ تک افراد کے روزگار وابستہ ہے ،نصیب خان ،امداداللہ ایڈوکیٹ کا اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو۔

تفصیلات کے مطابق ضلع بھرکے تمام ٹرک اونرز اور گڈز ٹرانسپورٹ یونین کو مشترکہ اجلاس زیر صدارت حاجی سید احمد شاہ عرف چنگئی منعقد ہوا جس میں عبد الستار ، شاہ فرین خان ،مختیارخان اور دیگر نے کثیر تعدادمیں شرکت کی ،اجلاس میں فیصلہ کیاگیاکہ بیس ٹن اور ستائیس ٹن وزن کا فیصلہ لاگو کرنا ہمارے ساتھ سراسر ظلم ہے کیونکہ ہرگاڈی کی قیمت ایک کروڑ چالیس لاکھ روپے تک ہوتاہے جس میں ہرگاڈی مالک ماہانہ لاکھوں روپے قسط دینے پر مجبورہوتاہے۔




اجلاس میں ضلعی انتظامیہ اور ڈی سی کے اس فیصلے کی تائید کردی گئی کہ پرانے وزن کا طریقہ کار لاگو کردی گئی ،اجلاس کے بعد صحافیوں کو تفصیلات بتاتے ہوئے گڈز ٹرانسپورٹ اور ماربل رہنماوں نصیب خان ،امداداللہ خان ایڈوکیٹ نے کہاکہ ضلعی انتظامیہ کی طرح ضلعی پولیس اور ڈی پی او بونیربھی ماربل سے وابستہ غریب لوگوں پر ترس کرکے ٹرکوں کو مسلسل چالان کرنے کا سلسلہ بند کریں انہوں نے کہاکہ لوڈ شدہ ٹرکوں کو پولیس بلاجواز کئی گھنٹوں تک ایسی مقامات پر کھڑی کرتے ہیں جس سے ٹرکوں کے لاکھوں روپے کے ٹائر تباہ ہوتے ہیں انہوں نے کہاک پیرکے روز ضلعی انتظامیہ اور پولیس کے ساتھ مذاکرات کرنے اور میٹنگ کرنے کیلئے لائحہ عمل طے کرلیاگیاہے امیدہے کہ کامیاب مذاکرات کے بعد ماربل کی صنعت اور ماربل کی ٹرکوں کی آد و رفت میں مزید بہتری آئیگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں