467

ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کو وہ کامیابی نصیب نہی ہوئی جسکی توقع کی جا رہی تھی

پی ٹی آئی اور ضمنی الیکشن
14 اکتوبر 2018 کے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کو وہ کامیابی نصیب نہی ہوئی جسکی توقع کی جا رہی تھی. وجوہات بہت سارے ہیں لیکن سب سے بڑی وجہ مہنگائی کا بڑھ جانا تھا. اس سے75 فیصد غریب عوام متاثر ہوئئ. اس کے بھی بہت سارے فیکڑز ہیں لیکن ایک فیکڑ یہ ہے کہ ملک کے اندر چھپے ہوئے دشمنوں نے پی ٹی آئی کی حکومت کو بدنام کرنے کی ہر کوشش کی ہے.

کرپشن زوروں پر ہے جو ایک لعنت ہے اور معاشرے کے لیے ناسور بن چکا ہے. لیکن افسوس کا مقام یہ ہے کہ جس نے کرپشن کی ہے اس سے نفرت کرنے کے بجائے لوگ انکو گلے میں ہار ڈالنے کے عادی ہیں. لوگ اس مافیا سے ڈرتے ہیں کہ کہیں ہمیں نقصان نہ پہچایا جائے. عوام کا عدم اعتماد تھا سابقہ حکومت کے خلاف. لیکن موجودہ حکومت کوشش کر رہی ہے کہ اعتماد کو بخال کیا جائے لیکن کہاں 70 سالوں کی محرومیوں کو اتنی جلدی دور کی جاسکتی ہیں. ہاں بہت جلد ہوجائیگا اگر عوام با شعور لوگوں کی طرح سوچنے لگے.




عوام کیسے کامیاب ہوں جہاں میٹر ریڈر قوم کے فیصلے کرے. جہان سینما چلانے والے صدر بنتے ہوں. جہاں قاتل پارٹی کا سربراہ ہو. جہان منافق اور جھوٹا ایک ایماندار ادمی سے الیکشن جیت جائے. جہاں کرپٹ کو ٹالک شوز میں لاکر قوم کو خب لوطنی کا درس دلوایا جائے. جہاں قوم کے معمار (استاد) کو کم نظری سے دیکھا جاتا ہو بمقابلہ کرپٹ سیاستدان کے. یہ قوم کیسے نجات حاصل کریگی.

اب بھی وقت ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں کرپٹ لوگوں کو مسترد کریں. اور ایماندار لوگوں کو سامنے لائیں. ایماندار جہاں بھی ہو اور جس پارٹی سے بھی ہو اسکو کامیاب کریں. عمران خان ایک ایماندار وزیر اعظم ہے اس پر بھروسہ کرو اور انکو وقت دو تاکہ جلد بازی میں کوئی غلطی نہ کر بیٹھے.
سب سے پہلے پاکستان. پاکستان ذندہ باد.




تخریر و تجزیہ
صوبیدار میجر (ر) بخت روم شاہ تمعہ خدمت عسکری
سیاسی و سماجی کارکن پی ٹی آئی بونیر خیبر پختونخواہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں