395

بلدیاتی نظام میں تبدیلی لانے کی تجویز پر ضلع کونسل بونیرسراپا احتجاج

بونیر شوکت بونیری
پی ٹی آئی حکومت کی جانب سے بلدیاتی نظام میں تبدیلی لانے کی تجویز پر ضلع کونسل بونیرسراپا احتجاج،اتفاق رائے سے نئی بلدیاتی نظام کے خلاف قرار داد منظور ،حکومت کی جانب سے بلدیاتی نظام میں تبدیلی کی کوشش کی گئی تو صوبائی سطح پر بھرپوراحتجاج کیا جائےگا۔

ضلعی ناظمین کے مشاورت کے بغیر کوئی نظام نہیں چلنے دیاجائےگا ۔تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ کونسل بونیرکا پہلی بار اتفاق رائے سے ہنگامی اجلاس زیر صدارت ڈسٹرکٹ کنوینر یوسف علی خان منعقد ہوا جس میں ڈسٹرکٹ ناظم ڈاکٹر عبیداللہ ،اپوزیشن لیڈر حاجی صدیق اللہ ،سردارعلی خان ،محمد خالق خان ،رشید احمدخان ،اقبال خان آمازئی ،ولی الرحمن اور دیگرنے تجاویز پیش کئے ،ڈسٹرکٹ ناظم اور ڈسٹرکٹ نائب ناظم کو مکمل اختیاردیا۔

اس موقع پر اتفاق رائے سے نئے بلدیاتی نظام لانے کی بھرپورمخالفت کی گئی اور کہاگیاکہ بلدیاتی نظام کو بااختیاربناکر منتخب ناظمین کو اختیاردی جائے اور سابق صدر پاکستان پرویز مشرف کی بلدیاتی نظام کو لاگوکیاجائے ،ضلع ناظم ڈاکٹر عبیداللہ ،نائب ناظم یوسف علی خان اور دیگرنے کہا کہ موجودہ بلدیاتی نظام پاکستان تحریک انصاف کے سابق صوبائی حکومت نے سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پر قائم کیا تھا ،کتابوں کی حدتک یہ نظام بہترین نظام ہے مگر گراونڈ پر کچھ نہیں ہے ۔انہوں نے کہاکہ گذشتہ کئی روز سے تجاویز کے نام پر صوبائی حکومت نے موجودہ نظام کو قبل از وقت ختم کرنے اور نئے نظام میں ضلع کونسل کی تصور کو ختم کرنے کی باتیں ہو رہی ہے مگر ہم صوبائی حکومت پر واضح کرتے ہے کہ اگرایسا کیاگیا توپورے صوبہ میں احتجاجوں کا سلسلہ شروع ہوجائےگا ،انہوں نے کہاکہ ہم حکومت کی اس فیصلہ کو تسلیم کرنے کو تیارنہیں اور ناظمین کے مشاورت کے بغیر بلدیاتی نظام میں تبدیلی لانے کی ہرفورم پر مخالفت کریں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں